Gomal University

گومل یونیورسٹی قیا م کے پچاس سال مکمل ہونے پر وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کی ہدایت پر گولڈن جوبلی تقریب کے آغاز’ افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی سابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی جبکہ صدارت وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ نے کی’تقریب میں دیگر سابق وائس چانسلرز کے موصول ہونیوالے پیغامات سمیت ایلومینائی کے پیغامات بھی گولڈ ن جوبلی تقریب میں پڑھے گئے’ گولڈن جوبلی کا کیک کاٹنے کے ساتھ شجرکاری مہم سمیت طلباء نے بھی اپنے فن کا مظاہرہ کیا’اساتذہ، افسران ، ملازمین اور طلباء کی بھرپور شرکت

گومل یونیورسٹی قیا م کے پچاس سال مکمل ہونے پر وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کی ہدایت پر گولڈ ن جوبلی تقریب کا آغاز کر دیا گیا۔ اس سلسلے میں گومل یونیورسٹی کے ڈاکٹر عبدالقدیر خان آڈیٹوریم میں ایک پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا تقریب کے مہمان خصوصی سابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی تھے جبکہ صدارت وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ نے کی۔ گولڈ ن جوبلی کی تقریب میں رجسٹرار سمیت تمام شعبہ جات کے ڈینز، ڈائریکٹرز، انتظامی افسران، ملازمین اور طلباء بھی شریک تھے۔ گومل یونیورسٹی کے 50ویں یوم تاسیس تقریب میں گومل یونیورسٹی کیلئے اپنی ذاتی زمین دے کر خطے میں فروغ تعلیم کیلئے کردار ادا کرنے والے پہلے وائس چانسلر نواب اللہ نواز خان کے خاندان کی جانب سے آیا ہوا خصوصی پیغام سنانے کے ساتھ ساتھ سابق وائس چانسلرز ڈاکٹر وحید خان ‘پروفیسر ڈاکٹر فرید خان’میجر جنرل(ر) پروفیسر ڈاکٹر حامد شفیق ‘پروفیسر ڈاکٹر عمر علی خان ‘ پروفیسر ڈاکٹر انجنیئرمحمد عنایت اللہ خان بابر ‘پروفیسر ڈاکٹر محمد سرور ‘پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی کیلئے دعائیہ کلمات بھیجے جن کو گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات کے ڈینز نے پڑھاجبکہ ڈینز، اساتذہ، افسران اور ملازمین نے بھی اس موقع پر اپنے تاثرات کا اظہار کیا۔ تقریب میں گومل یونیورسٹی کے 50سالہ دور میں اس جہاں فانی سے کوچ کر جانیوالے وائس چانسلرز ، اساتذہ، افسران اور ملازمین کے ایصال ثواب کیلئے دعا بھی کروائی گئی۔اس موقع پر مہمان خصوصی سابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی ‘وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ رجسٹرار اور ڈینز، ڈائریکٹر اور انتظامی افسران نے گومل یونیورسٹی کے سیکورٹی سیکشن میں شجرکاری بھی کی۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کی سرپرستی میں ہونوالی گومل یونیورسٹی کی گولڈن جوبلی کا انعقاد ڈائریکٹر ٹانک کیمپس ڈاکٹر احسان اللہ دانش، ڈپٹی رجسٹرار میٹنگ ڈاکٹر نعمان خان، انچارج پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ ڈیرہ اسماعیل خان گومل یونیورسٹی محمد فضل الرحمن ، پبلک ریلیشن آفیسر راجہ عالم زیب نے کیا۔ گولڈن جوبلی کی تقریب میں 1982-86کے سیشن کی طلبہ چیف آرگنائزر گومیلین فورم مس آمنہ بی بی کا یوم تاسیس کے حوالے سے ویڈیو پیغام بھی شرکاء کے آگے پیش کیا گیا ۔50ویں یوم تاسیس کی تقریب میں یونیورسٹی کے طلباء نے بھی بھرپور شرکت کرتے ہوئے روایتی موسیقی آلات سے ایوان کو خوب محظوض کیا جس کو تمام شرکاء نے خوب سراہا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی کا کہنا تھا کہ سب سے پہلے تو میں گومل یونیورسٹی کا اعلان کرنے والے اس وقت کے وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو اور یونیورسٹی کے لئے اپنی ذاتی زمین دینے والے نواب اللہ نواز خان سمیت اس وقت کے ان تمام لوگوں جنہوں کی وجہ سے یہ قدیم مادر علمی معرض وجود میں آئی کو خرا ج عقید ت پیش کرتا ہوں کہ جن کی وجہ سے اس خطے میں علم پروان چڑھا اور اس خطے میں ہی بلکہ بلکہ صوبہ خیبرپختونخوا سمیت پورے ملک میں اس کے فیض سے بہت سے طلباء مستفید ہوئے جو آج ملک اور بیرون ملک مختلف شعبوں میں اپنی قابلیت کے جوہر دکھا کر اس قدیم مادر علمی کا نام روشن کررہے ہیں ۔ ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی کا مزید کہناتھا کہ میں سمجھتا ہوں کہ تعلیم میں سیاست نہیں ہو نی چاہئے کیونکہ تعلیم سے قوم بنتی ہے جو ایک مہذب معاشرے کی تشکیل کا باعث بنتی ہیں اور میں ہر اس شخص کو سلوٹ کرتا ہوں جو پڑھے لکھے اور مہذب معاشرے کرکے ملک و قوم کی ترقی کا باعث بنے ۔سابق وائس چانسلر کا مزید کہنا تھا کہ تعلیمی ادارے حکومتی توجہ کے مرکوز ہیں مالی مشکلات کے باعث جن حالات میں وائس چانسلر ز یونیورسٹیوں کو چال رہے ہیں میں سمجھ سکتا ہوں کیونکہ میں خود اس مراحل سے گزر چکا ہوں ۔ پنشن کی ادائیگی حکومت کا کام ہوتا ہے اور میں خوشی اس چیز ہے کہ ڈیرہ اسماعیل خان کے دو سپوت آج صوبہ خیبرپختونخوا کی اہم ترین ذمہ داریاں نبھارہے ہیں ایک چانسلر /گورنر خیبرپختونخوافیصل کریم کنڈی جبکہ دوسرے وزیراعلیٰ سردار علی امین گنڈہ پورہیں اور میں آج دونوں کی توجہ اس قدیم مادر علمی کی طرف دلوانا چاہوں گا کہ چانسلر /گورنر خیبرپختونخوافیصل کریم کنڈی یہ آپ کے پارٹی قائد ذوالفقار علی بھٹو کا لگایا ہوا بیج ہے جو ایک درخت بن کر علم کی شکل میںلاکھوں طلباء کو سایہ دے رہا ہے جبکہ دوسری جانب وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین گنڈہ پور سے کہوں گا کہ اللہ پاک نے آپ کوایک رتبہ دیا ہے اور پارٹی کے منشور میں تعلیم کو خصوصی اہمیت دی گئی ہے لہٰذا آپ اس قدیم مادر علمی کو مالی خسارے سے نکالنے میں اپنا مثبت کردار کریں ۔پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی نے مزید کہا کہ مجھے گومل یونیورسٹی کے پی آر او کا فون آیا کہ گومل یونیورسٹی کا50یوم تاسیس پر اپنا پیغام بھیجیں جو آج کی تقریب میں پڑھا جائے گا تو میں نے سمجھا کہ میرا گومل یونیورسٹی کی اس تقریب میں شامل ہونا انتہائی ضروری ہے اپنی تمام تر مصروفیات کو چھوڑ کر آپ کے پاس پہنچ گیا اورآپ کے اس سادہ اور منظم تقریب دیکھ کر بہت خوشی ہوئی ۔آخر میں پھر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ سمیت تمام یونیورسٹی کو مبارک باد دیتا ہوں اور دعا گو ہوں کہ وائس چانسلر پروفیسرڈاکٹر شکیب اللہ کی سربراہی میں گومل یونیورسٹی مالی خسارے سے نکل آئے اور ترقی کی منازل طے کرے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کا کہنا تھا کہ سب سے پہلے تو میں آپ تمام ڈین، ڈائریکٹرز، اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلباء کو گومل یونیورسٹی کی گولڈن جوبلی پر مبارک باد دیتاہوں اور اس کے ساتھ ساتھ نواب اللہ نواز خان سمیت اس وقت کی تمام انتظامیہ اور اب تک آنے والے ان تمام وائس چانسلر کو سلام پیش کرتا ہوں جنہوں نے گومل یونیورسٹی کے قیام سے لے کر اس کی ترقی و خوشحالی میں اپنا مثبت کردار ادا کیا کیونکہ اگر یہ ادارے نہ ہوتا تو شاید اس خطے میں تعلیم کی شمع روشن نہ ہو سکتی ہے ۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کا مزید کہنا تھا کہ آج سے گومل یونیورسٹی میںتمام تقریبات، چاہئے وہ تعلیمی سرگرمیوں میں ہوں، کھیلوں یا ہم نصابی سب گولڈن جوبلی سے منسوب ہوںگی۔ ان کا مزید کہناتھا کہ ادارے کو مالی خسارے سے نکالنے کیلئے مجھ سمیت میری تمام ٹیم کوشاں ہے اور یہی وجہ ہے کہ آج ہمارے طلباء کی تعداد زیادہ ہو گئی ہیں اور ان کو لانے اور لے جانے میں بسیں کم پڑ رہی ہیں اور اس حوالے سے وزیراعلیٰ خیبرپختونخو ا سردار علی امین گنڈہ پور سے ملاقات کر چکا ہوں اور انہوں نے فنڈز دینے کے ساتھ ساتھ دیگر سہولیات دینے اور نئی بسیں دینے کا وعدہ کیا ہے جو انشاء اللہ جلد پورا ہوگا۔ ڈاکٹر شکیب اللہ کا مزید کہنا تھا کہ آج کے دن ہم یہ عہد کرتے ہیں کہ جو ہم سے ہو سکا ہم اپنی صلاحیتوںسے بڑھ طلباء کو معیاری تعلیم دے کر اس ادارے کی کو کامیابی میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ وائس چانسلر کا مزید کہنا تھا کہ آج کی تقریب کے منتظمین گزشتہ 6ماہ سے اس تقریب کے کامیاب انعقاد کیلئے لگے ہوئے تھے جس پر میں ان تمام کو گولڈ ن جوبلی کے کامیاب پروگرام کے انعقاد پر مبارک باددیتا ہوں۔ تقریب میں مہمان خصوصی سابق وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر منصو ر اکبر کنڈی کو ڈائریکٹر اکیڈمکس پروفیسر ڈاکٹر شفیع اللہ خان، ڈائریکٹر ایڈمیشن ریاض احمد بیٹنی اور پرنسپل وینسم کالج ڈاکٹر فتح خان سلیمانی نے روایتی لنگی پہنائی جبکہ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر شکیب اللہ کو کنٹرولر امتحانات وسیم خان کٹی خیل’ ڈائریکٹر ایڈمیشن ریاض احمد بیٹنی ‘ ڈپٹی ڈائریکٹر ایڈمن محمد عثمان خان نے روایتی لنگی پہنائی ۔ تقریب کے اختتام پر 50ویں یوم تاسیس کا کیک کاٹا گیا اور گومل یونیورسٹی سمیت پاکستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے دعا بھی کی گئی ۔تقریب کے اختتام پر پاکستان زندہ، اسلام زندہ باد اور گومل یونیورسٹی زندہ باد کا نعرے لگا کر ملک ، اسلام اور گومل یونیورسٹی سے محبت اور یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔

Scroll to Top